پاکستان

پاکستان انٹر نیشنل ائیرلائنز کی پہلی پرواز 322 زائرین کو لیکر دمشق پہنچ گئی

دوبارہ فضائی رابطہ اقتصادی تعلقات کو فروغ دینے کی جانب ایک اہم قدم ہے،شامی وزیر ٹرانسپورٹ

دمشق:پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی اے) کی پہلی پرواز سیدہ زینب (ع) کے 322 زائرین کو لے کر جمعہ کی سہ پہر کراچی ائیرپورٹ سے دمشق انٹرنیشنل ایئر پورٹ پہنچی۔شام اور پاکستان کے درمیان 28 سال کے طویل عرصےکے بعد یہ پہلا فضائی رابطہ ہے،دمشق پہنچنے پر پی آئی اے کے طیارے کو واٹر کینن کی سلامی دی گئی۔دمشق کے بین الااقوامی ائیرپورٹ پر شام کے وزیر ٹرانسپورٹ نے دیگر عملے کے ہمرار پاکستانی زائرین،وزیر ہوابازی غلام سرور خان کو وفد کے ہمراہ خوش آمدید کہا۔ یہ پرواز ، جس میں وزیر ہوا بازی غلام سرور خان ، اسلام آباد میں شام کے سفیر ، پاکستان ایئر لائنز کے چیئرمین ارشد ملک سمیت 322 مسافر سوارتھے۔

پی آئی اے کی پرواز دمشق پہنچنے پرشام کےوزیر ٹرانسپورٹ اور دیگر شامی حکام نے پاکستان وفد اور جہاز کے عملہ کو خوش آمدید کہا۔اْنہوں نے حالیہ پیش رفت کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ پی آئی اے کو اپنی خصوصی پروازوں کو باقاعدہ شیڈول پروازوں میں تبدیل کرنا چاہیے۔ بعد ازاں پاکستانی وفد نے حضرت زینب (ع) کے مزار پر حاضری دی جہاں ان کا استقبال شام کے وزیر اوقاف نے کیا۔ حضرت زینب (ع) کے مزار پر دعا اور دعائیں کرنے کے بعد وزیر ہوا بازی غلام سرور اور ارشد ملک اسی پرواز کے ذریعے پاکستان واپس آئے۔

پاکستانی وزیر ہوا بازی نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے شام کی قیادت اور عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم شام کی حکومت اور ہوا بازی کے ادارے کا پاکستانی پرواز کو ممکن بنانے کیلئے جو سہولیات اور تعاون کیا ہے وہ قابل تحسین ہے۔پاکستان کے وزیر ہوابازی نےمزید کہا کہ طویل عرصے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان دوبارہ فضائی رابطہ پہلا قدم ہے اور

اس کے بعد شام اور پاکستان کے درمیان ہوا بازی کے شعبے میں مزید تعاون بڑھانے کیلئے دیگر اقدامات کیے جائیں گے۔ شام کے وزیر ٹرانسپورٹ زوہیر خزیم نے جوابی بیان میں کہا کہ یہ پرواز 20 سال سے زیادہ عرصے کے بعد پہلی پرواز ہے جو دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعلقات کو فروغ دینے کی جانب ایک اہم قدم ہے۔ ترجمان پی آئی اے کے مطابق 12 خصوصی پروازیں نجف ، 2 بغداد اور 4 دمشق کے لیے چلائی جائیں گی اور یہ آپریشن 24 ستمبر 2021 تک کراچی ، لاہور اور اسلام آباد سے جاری رہے گا۔

مزید دکھائیے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں