افغانستانپاکستان

طالبان ترجمان کا انٹرویو کرنے والی خاتون بہشتا ارغند ٹی وی اینکر نے افغانستان کو خیر آباد کہہ دیا

انٹرویو نے دنیا بھر میں شہ سرخیاں بنائی تھی، لاکھوں لوگوں کی طرح میں بھی طالبان سے ڈرتی ہوں:ٹی وی اینکر

کابل:طالبان کے ترجمان عبدالحق حماد کا انٹرویو کرنے والی افغانستان کی معروف اینکر بہشتا ارغند نے بھی ملک میں طالبان کے مکمل کنٹرول کے بعد افغانستان کو خیرباد کہہ دیا۔ افغان ٹی وی اینکر نے طالبان کے ترجمان کا انٹرویو کرتے ہوئے تاریخ رقم کی تھی۔

Female TV anchor

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بہشتا نے اپنے اہلِ خانہ کے ساتھ ملک چھوڑنے کی تصدیق کردی۔ نیوز اینکر کا کہنا تھا کہ باقی لوگوں کی طرح وہ بھی طالبان سے ڈرتی ہیں، میں ابھی جارہی ہوں لیکن ایک دن ایسا ضرور آئے گا میں اپنے وطن واپس آؤں گی۔

ارغند نے سی این این کے ساتھ خط و کتابت کی اور پچھلے دو ہفتوں کے تجربے کو سنایا۔ بالآخر اس نے کہا کہ "میں نے ملک چھوڑ دیا کیونکہ لاکھوں لوگوں کی طرح میں بھی طالبان سے ڈرتی ہوں۔” طلوع کے مالک سعد محسنی نے کہا کہ ارغند کا معاملہ افغانستان کی صورت حال کی علامت ہے۔

محسنی نے کہا کہ ہمارے تقریباً تمام معروف صحافی اور رپورٹر چلے گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم ان کی جگہ نئے لوگوں کے ساتھ پاگلوں کی طرح کام کررہے ہیں۔ کیونکہ ہمارے پاس وہ لوگ ہیں جو غیر محفوظ محسوس کرتے ہیں اور آپریشن کو جاری رکھنے کا دوہرا چیلنج ہے۔ محسنی نے واشنگٹن پوسٹ کے ایک کالم میں کہا کہ طالبان دنیا کے سامنے ایک اعتدال پسند چہرہ پیش کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

 

مزید دکھائیے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button