برطانیہبین الاقوامیتارکین وطنسعودی عربقطرکاروبارکورونا وائرس

لندن کا مشہور ڈیپارٹمنٹل سٹور برائے فروخت، قیمت چار ارب پاؤنڈز

سیلفریجز کے ارب پتی مالکان ویسٹن خاندان نے لندن کے تاریخی ڈیپارٹمنٹل سٹور کے کاروبار کو فروخت کرنے کے لیے باضابطہ نیلامی کا آغاز کر دیا۔

یہ سمجھا جاتا ہے کہ مالیاتی خدمات فراہم کرنے والے بینک کریڈٹ سوئس کے مشیر خریدار کی تلاش شروع کریں گے۔ کمپنی کی مالیت چار ارب پاؤنڈز تک ہوسکتی ہے۔ یہ عمل رواں سال کے اختتام تک مکمل ہونے کی توقع ہے۔

لندن کے اخبار ایونگ سٹینڈرڈ کے مطابق گذشتہ ماہ پہلی بار یہ خبر آئی تھی کہ ایک بے نام بولی دہندہ نے، جو پرائم مارک کے مالک ایسوسی ایٹڈ برٹش فوڈز میں اکثریتی حصص کے مالک ہیں، ویسٹنز سے خریداری کے لیے رابطہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ ابھی تک کوئی باضابطہ بولی پیش نہیں کی گئی لیکن فریقین کی ایک چھوٹی سی تعداد نے پہلے ہی ابوظہبی، سعودی عرب اور قطر کے فنڈز کے ساتھ ممکنہ دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

قطری پہلے ہی سیلفریجز کے سخت حریف ہیرڈز کے مالک ہیں جسے 2010 میں محمد الفاید سے 1.5 ارب پاؤنڈز میں خریدا گیا تھا اور دونوں سٹورز مشرق وسطیٰ کے خریداروں میں مقبول ہیں۔

سیلفریجز دنیا بھر میں 25 آؤٹ لیٹس چلاتا ہے، جس میں اس کا فلیگ شپ لندن میں آکسفورڈ سٹریٹ سٹور اور بُل رنگ، برمنگھم شامل ہیں۔

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

اس فرم کی بنیاد 1908 میں رکھی گئی تھی لیکن یہ 2003 سے ویسٹن خاندان کے زیر کنٹرول ہے، جس نے اسے سخت مقابلے میں 600 ملین پاؤنڈز کے عوض نجی طور پر لیا تھا۔

اس معاہدے کے روح رواں ڈبلیو گیلن ویسٹن کر رہے تھے جو اپریل میں 80 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔

انہوں نے دو سال قبل اپنی بیٹی الانہ ویسٹن کے لیے راستہ بنانے کے لیے سیلفریجز گروپ کے چیئرمین کا عہدہ چھوڑ دیا تھا۔

ڈیپارٹمنٹل سٹور سیکٹر میں وسیع تر مندی، جس دوران ڈیب نمز کا خاتمہ اور بڑے حریفوں میں کمی دیکھی گئی، کے باوجود سیلفریجز نے حالیہ برسوں میں زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ گروپ کو کرونا (کورونا) وبا کے دوران نقصانات کا سامنا کرنا پڑا۔

ایک سال قبل کمپنی نے اپنی تاریخ کے ’مشکل ترین سال‘ کے بعد تقریباً 450 ملازمتوں میں کٹوتی کی تھی جو اس کے کل ملازمین کا تقریباً 14 فیصد ہے۔

یہ سٹور غیرملکی سیاحوں میں بہت مقبول ہے اور یہاں انتہائی مہنگی مصنوعات ملتی ہیں۔

مزید دکھائیے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں