اریگیشنحقوقکالم و مضامینکوئٹہ

شہریوں نے اپنی مدد آپ کی بنیاد پر کوئٹہ میں منی چھانگا مانگا جنگل تیار کیا

– کالم و مضامین –

ہزارہ کمیونٹی کی اپنی مدد آپ کی اعلیٰ مثال

کوئٹہ کے شہریوں نے پہاڑ کے دامن میں اپنی مدد آپ کے تحت ایک منی جنگل بنا لیا ہے جبکہ درختوں کے لگانے اور ان کی آبیاری سمیت دیگر کاموں کا بیڑہ بھی خود ہی اٹھایا ہوا ہے۔

ہزارہ کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے افراد اس مصنوعی جنگل کو آپس میں چندہ جمع کرکے آہستہ آہستہ پروان چڑھا رہے ہیں۔ خدمت کے جذبے سے سرشار ان شہریوں نے اس منی جنگل کو گلزار باکلو کا نام دیا ہے۔

شہر کے ماحولیاتی نظام کو بہتر بنانے کے لیے یہ شہری جن میں اکثریت بزرگ افراد کی ہے اس جنگل کو وسعت دینے کی غرض سے پیسہ لگانے کے علاوہ اپنا قیمتی وقت بھی دیتے ہیں۔ درختوں کی دیکھ بھال میں یہ تمام اپنا اپنا کردار ادا کرتے ہیں۔

صدقہ جاریہ سمجھ کر کام کرنے والے ان افراد اس حوالے سے کسی تشہیر و تعریف کے خواہشمند نہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جب وہ مختلف پرندوں کو یہاں آکر درختوں سے استفادہ کرتے اور اپنی خوراک حاصل کرتے دیکھتے ہیں تو انہیں خوشی ہوتی ہے کہ وہ لوگ ثواب کما رہے ہیں۔

جنگل قائم کرنے والے شہریوں کا کہنا ہے کہ درخت تو وہ لوگ چندہ کرکے یا کسی سے عطیہ لے کر لگا ہی لیتے ہیں اور ان کی دیکھ بھال بھی کرتے ہیں لیکن اگر حکومت بلوچستان صرف اتنا کردے کہ وہاں ڈرپ اریگیشن کے طریقہ کار کے ذریعے پانی کے پائپبس کی سہولت فراہم کردے تو اس مقامن پر کئی ہزار مزید درخت لگا دیں گے۔




جملہ حقوق بحق مصنف محفوظ ہیں .
آواز جرات اظہار اور آزادی رائے پر یقین رکھتا ہے، مگر اس کے لئے آواز کا کسی بھی نظریے یا بیانئے سے متفق ہونا ضروری نہیں. اگر آپ کو مصنف کی کسی بات سے اختلاف ہے تو اس کا اظہار ان سے ذاتی طور پر کریں. اگر پھر بھی بات نہ بنے تو ہمارے صفحات آپ کے خیالات کے اظہار کے لئے حاضر ہیں. آپ نیچے کمنٹس سیکشن میں یا ہمارے بلاگ سیکشن میں کبھی بھی اپنے الفاظ سمیت تشریف لا سکتے ہیں.

مزید دکھائیے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں