بھارتحقوقدینیاتفضائیہلاہور

بھارتی فضائیہ کا طیارہ گر کر تباہ، پائلٹ ہلاک

– آواز ڈیسک –

نئی دہلی: بھارتی صوبہ پنجاب میں بھارتی فضائیہ کا طیارہ مِگ-21 گھر کر تباہ ہو گیا جس کے نتیجے میں ایک پائلٹ ہلاک ہو گیا۔

خبر رساں ادارے انڈین ایکسپریس کے مطابق طیارہ بھارتی صوبہ پنجاب کے ضلع موگا کے گاؤں لنگیانہ میں جمعہ کی صبح گرا جس کے نتیجے میں طیارہ تباہ اور ایک پائلٹ کی موت ہو گئی جس کی شناخت اسکواڈرن لیڈر ابھینو چوہدری کے نام سے ہوئی ہے۔

جس وقت حادثہ پیش آیا اس وقت اسکواڈرن لیڈر رات کو ٹریننگ کررہے تھے اور بھارتی فضائیہ نے حادثے کی تصدیق کردی ہے۔

ہلاک پائلٹ کی لاش کئی گھنٹے تلاش کے بعد جائے حادثہ سے 2 کلومیٹر دور ملی البتہ واقعے میں مزید کوئی جانی نقصان نہیں ہوا جبکہ طیارے کی تباہی سے کسی طرح کی املاک کو بھی نقصان نہیں پہنچا۔

پولیس کے ایس پی ہیڈ کوارٹرز گردیپ سنگھ نے بتایا کہ پائلٹ کی لاش 4 گھنٹے کی تلاش کے بعد حادثے سے 2 کلو میٹر دور ملی، پیراشوٹ کھلا ہوا ملا جبکہ انہوں نے ڈیوائس کے ذریعے ایس او ایس بھی بھیجا تھا لیکن اس وقت تک ان کی موت واقع ہو چکی تھی۔

پولیس افسر کے مطابق پائلٹ نے پیراشوٹ کے باحفاظت لینڈنگ کی کوشش کی لیکن ایسا لگتا ہے کہ وہ اس میں کامیاب نہ ہوئے جس کے نتیجے میں ان کی گردن اور ریڑھ کی ہڈی ٹوٹ گئی۔

گردیپ سنگھ نے بتایا کہ طیارے نے راجستھان سے لدھیانہ کے علاقے گڑگاؤں کے لیے نرات میں ٹریننگ کی غرض سے اڑان بھری تھی اور جس وقت طیارہ گر کر تباہ ہوا، اس وقت وہ سورت گڑھ واپس آ رہا تھا۔

انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہم اس طیارے کے حادثے میں پائلٹ کو نہ بچا سکے لیکن کھلے میدان میں طیارہ تباہ ہونے کی وجہ سے کسی بھی قسم کا مزید جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا۔

پولیس کے مطابق طیارہ گرنے سے جیسے ہی دھماکا ہوا تو مقامی افراد نے اسے بم دھماکا سمجھ کر فوری پولیس کنٹرول روم کو اطلاع دی جس کے بعد پولیس نے فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچ پر کارروائی شروع کی۔

بھارتی فضائیہ نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر حادثے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مغربی سیکٹر سے رات کو اڑان بھرنے والے طیارے کو حادثہ پیش آیا جس کے نتیجے میں اسکواڈرن لیڈر ابھینو چوہدری کو جان لیوا چوٹیں آئیں، انڈین ایئرفورس ان کے اہلخانہ سے تعزیت کرتی ہے اور اس غم میں برابر کی شریک ہے۔

بھارتی فضائیہ نے حادثے کی وجہ جاننے کے لیے عدالتی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

جملہ حقوق بحق مصنف و ناشرمحفوظ ہیں .
آواز دینی ہم آہنگی، جرات اظہار اور آزادی رائے پر یقین رکھتا ہے، مگر اس کے لئے آواز کا کسی بھی نظریے یا بیانئے سے متفق ہونا ضروری نہیں. اگر آپ کو مصنف یا ناشر کی کسی بات سے اختلاف ہے تو اس کا اظہار ان سے ذاتی طور پر کریں. اگر پھر بھی بات نہ بنے تو ہمارے صفحات آپ کے خیالات کے اظہار کے لئے حاضر ہیں. آپ نیچے کمنٹس سیکشن میں یا ہمارے بلاگ سیکشن میں کبھی بھی اپنے الفاظ سمیت تشریف لا سکتے ہیں. آپکے عظیم خیالات ہمارے لئے نہایت اہمیت کے حامل ہیں، لہٰذا ہم نہیں چاہتے کہ برے الفاظ کے چناؤ کی بنا پر ہم انہیں ردی کی ٹوکری کی نظر کر دیں. امید ہے آپ تہذیب اور اخلاق کا دامن نہیں چھوڑیں گے. اور ہمیں اپنے علم سے مستفید کرتے رہیں گے.

مزید دکھائیے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button