انصافپاکستانکراچی

کراچی: اے ٹی سی جج کا حلیم عادل شیخ کی درخواست ضمانت پر سماعت سے انکار

کراچی کی انسداد دہشت گردی عدالت کے جج نے سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما حلیم عادل شیخ کی درخواست ضمانت سننے سے انکار کردیا۔

گزشتہ روز انسداد دہشت گردی عدالت کے منتظم جج نے درخواست ضمانت عدالت 16 کے جج کو سماعت کے لیے منتقل کردی تھیں۔

بدھ کو حلیم عادل شیخ کی درخواست ضمانت جج کے سامنے پیش کی گئی، تاہم انہوں نے خود کو معاملے سے الگ کرتے ہوئے سماعت سے انکار کردیا۔

عدالتی ذرائع نے بتایا کہ انسداد دہشت گردی عدالت 16 کے جج نے منتظم جج کو ریفرنس بھیجتے ہوئے معاملے پر سماعت کے لیے اپنی عدم دستیابی ظاہر کردی اور کسی اور عدالت کو معاملہ منتقل کرنے کی درخواست کی۔

ذرائع نے کہا کہ اس کے بعد منتظم جج نے معاملہ انسداد دہشت گردی عدالت 3 کو بھجوا دیا اور قانون کے مطابق درخواستوں پر فیصلہ کرنے کی ہدایت کی۔

خیال رہے کہ حلیم عادل شیخ کو صوبائی اسمبلی کے حلقے پی ایس-88 ملیر میں ضمنی انتخاب کے موقع پر کشیدگی پھیلانے، فائرنگ، اقدام قتل اور دہشت گردی کے الزامات پر گرفتار کیا گیا تھا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج نے 25 فروری تک ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا اور تفتیشی افسر کو ہدایت کی تھی کہ ملزمان کو اگلی سماعت میں تفتیشی رپورٹ کے ساتھ پیش کریں۔

حلیم عادل شیخ سمیت دیگر زیر حراست افراد کے خلاف میمن گوٹھ اور گڈاپ ٹاؤن تھانوں میں تعزیرات پاکستان کی دفعات 147، 148، 149، 170، 171، 186، 114، 324، 353، 427 اور 337 ایچ کے ساتھ ساتھ انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997 کی دفعہ 7 کے تحت دو الگ الگ مقدمات درج کیے گئے ہیں۔

دو روز قبل پی ٹی آئی رہنما نے الزام لگایا تھا کہ حکومت سندھ نے سینٹرل جیل میں اپنے 50 سے 60 مجرمان، قیدیوں اور غنڈوں کے ذریعے ان پر حملہ کراویا۔

تاہم حکومت سندھ کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے حلیم عادل شیخ پر سینٹرل جیل میں حملے کے واقعے کی تردید کی تھی۔

منبع: ڈان نیوز

مزید دکھائیے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں