پاکستان

اسامہ ستی قتل، جوڈیشل انکوائری رپورٹ میں پولیس افسران کیخلاف دہشتگردی کا مقدمہ چلانے کی سفارش – Urdu News – Today News

اسلام آباد: اسامہ ستّی واقعے کی جوڈیشل انکوائری رپورٹ سامنے آ گئی ہے، جس کے بعد وزیراعظم عمران خان نے وزیرداخلہ کو جوڈیشل انکوائری رپورٹ کی روشنی میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کردی ہے۔

وزیراعظم نے جوڈیشل انکوائری کی سفارش پر ایس پی اینٹی ٹیررازم اسکواڈ (اے ٹی ایس)، نائٹ ڈیوٹی پر ایس پی انویسٹی گیشن ، ڈی ایس پی نائٹ ڈیوٹی کو بھی جوڈیشل انکوائری کی سفارش پر ہٹانے کا حکم دے دیا۔ وزیراعظم نے ہٹائے جانے والے تمام افسران اور اہلکاروں کےخلاف محکمانہ کارروائی کی ہدایت بھی کی ہے۔

اسلام آباد میں پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں قتل کیے گئے اسامہ ستّی کی جوڈیشل انکوائری رپورٹ سامنے آگئی ہے، رپورٹ کے مطابق اسامہ ستّی کا کسی ڈکیتی یا جرم سے کوئی واسطہ ثابت نہیں ہوا، اسامہ کو گولیاں جان بوجھ کر قتل کرنے کی نیت سے ماری گئیں،گولیاں ایک اہلکار نےنہیں 4 سے زائد اطراف سے ماری گئیں۔ جوڈیشل انکوائری رپورٹ میں متعلقہ ایس پی، ڈی ایس پی کیخلاف بھی کارروائی کی سفارش کی گئی ہے، انکوائری رپورٹ میں اسامہ ستی کے قتل کا معاملہ انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت چلانے کی سفارش کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق موقع پر پہنچنے والے پولیس افسران کی جانب سے ثبوت مٹانے کی کوشش کی گئی، پولیس نے واقعے کو ڈکیتی کا رنگ دینے کی کوشش کی، سینیئرافسران کو اندھیرے میں رکھا گیا، مقتول کو ریسکیو کرنے والی گاڑی کو غلط لوکیشن بتائی جاتی رہی، موقع پر موجود افسر نے جائے وقوعہ کی کوئی تصویر بھی نہیں لی۔

رپورٹ کے مطابق اسامہ ستّی کی گاڑی پر 22 گولیوں کی بوچھاڑ کی گئی، پولیس نے اسامہ کے قتل کو 4 گھنٹے تک فیملی سے چھپانے کی کوشش کی، جبکہ گولیوں کے 18 خولوں کو 72 گھنٹے بعد فرانزک کے لیے بھیجا گیا۔

مزید دکھائیے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں