امریکہبھارتپاکستانچین

بھارتی فوج کو لڑنا کس نے سکھایا؟ جنرل بخشی نے سب بتا دیا- روزنامہ اوصاف

نئی دہلی (ویب ڈیسک )سابق بھارتی آرمی چیف میجر جنرل گگن دیپ بخشی المعروف جنرل بخشی نے ایک تقریب سے خطاب کے دوران بتایا کہ بھارتی فوج کو پاکستان نے لڑنا سکھایا، کیونکہ اگر پاک آرمی نے بھارتی فوج کی چھترول نہ لگائی ہوتی تو انہیں لڑنا نہ آتا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ1962 میں چینی فوج نے بھی جب بھارت پر حملہ کیا تو اس کے بعد کہیں جا کر بھارتی فوج

کو لڑنا آیا۔جنرل بخشی نے کہا کہ وہ تقریب کے شرکا کو سچ سے آگاہ کرنا چاہتےہیں کیونکہ فوجی کو سچ بولنا ہی سکھایا جاتا ہے اگر ہم سچ نہیں بولیں گے تو اپنے لوگوں کو لڑائی کے میدان میں مروا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بھگوان کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ پاکستان نے ہمیں لڑنا سکھایا اور تب تک مارتا رہا جب تک ہماری فوج لڑنے کو راضی نہیں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ 1962 میں چین کی فوج نے بھارت کو ایسی کراری لات ماری کہ تب نہرو خاندان کبھی امریکا کہ آگے منت سماجت کرتا کہ اپنی فوج بھیجیں کبھی رائل ملٹری سے کہا کہ ہماری مدد کو آئیں مگر انہوں نے پلٹ کر جواب دیا کہ بھارت کی اپنی فوج کہا گئی؟ مگر وجہ یہ تھی کہ تب بھارتی فوج لڑنے کے قابل ہی نہیں تھی۔جنرل بخشی نے جواہر لعل نہرو کے 1964 میں مرنے کے واقعے پر کہا کہ شکر ہے کہ وہ مر گئے اور اس ملک کو بخش دیا۔جنرل بخشی نے یہ بھی بتایا کہ 1965 کی جنگ میں بھارت پاکستان کے مقابلے میں برابری کی سطح پر رہا جیت نہیں سکا۔ کیونکہ اگر تب بھی اپنی جان بچانے کے لیے بھارتی فوج جواب نہ دے پاتی تو واقعی پاکستانی ٹینک دہلی میں آ کر نماز پڑھتے۔میجر جنرل گگن دیپ بخشی نے کہا کہ پاکستان نے بطور آزاد ریاست ملک کا پہلا گورنر جنرل قائد اعظم محمد علی جناحؒ کو بنایا مگر بھارت میں لارڈ ماؤنٹ بیٹن کو تھونپا گیا جس کے بعد جواہر لعل نہرو نے بھارتی فوج کو ہمیشہ ڈی مورلائز کیا۔ انہوں نے پاکستان اور سردرا پٹیل کا شکریہ ادا کیا کہ پاکستان بھارتی فوج کی چھترول کرتا رہا اور سردار پٹیل بھارتی فوج کا حوصلہ بڑھاتا رہا اور اسی طرح بھارتی فوج کو بلآخر لڑنا آ گیا۔

مزید دکھائیے

متعلقہ خبریں

Back to top button

اپنا ایڈ بلاکر تو بند کر دیں

آواز ، آزادی صحافت کی تحریک کا نام ہے جو حکومتوں کی مالی مدد کے بغیر خالص عوامی مفادات کی خاطر معیاری صحافتیاقدار کی ترویج کرتا ہے اپنے پسندیدہ صحافیوں کی مدد کے لئے آواز کو اپنے ایڈ بلوکر سے ہٹا دیں