Breaking News
شازیہ کنول بٹ کی ماس ریسلنگ میں چوتھی پوزیشن

شازیہ کنول بٹ کی ماس ریسلنگ میں چوتھی پوزیشن

ماسکو،روس (اشتیاق ہمدانی سید ): روس کے شہر ماسکو میں منعقد ہونے والے ماس ریسلنگ ورلڈ کپ جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والی شازیہ کنول بٹ نے چوتھی پوزیشن حاصل کی۔ پچاسی کلو گرام کے مقابلے میں شرکت کرکے وہ پاکستان کی پہلی خاتون ریسلرین بن گئیں۔ان مقابلوں میں دنیا کے ستر ممالک کے کھلاڑیوں نے حصہ لیا ۔مینز کیٹگری میں شریک فرقان خان کو انجری کے باعث مقابلے سے دستربردار ہونا پڑا۔

شازیہ کنول بٹ 2015ء میں عمان میں پاور لفٹنگ اور ویٹ لفٹنگ کے وومن ایشن کپ میں بھی حصہ لے چکی ہیں جس میں وہ دنیا کی پہلی مسلم خاتون تھیں جو 142کلو کی کیٹیگری میں ایشین چیمپیئن بنیں۔ جنوبی پنجاب میں سرکاری سطح پر ویٹ لفٹنگ، پاور لفٹنگ اور ریسلنگ کے لیے خواتین کے لیے کوئی جم یا خاتون کوچ نہیں ہے اس کے باوجود شازیہ کنول بٹ نے اپنی مدد آپ کے تحت دنیا میں پاکستان کا نام روشن کیا ہے۔

شازیہ کنول بٹ 2020ء اولمپکس میں پاور لفٹنگ میں پاکستان کے لیے سونے کا تمغہ جیتنے کے لیے پر عزم ہیں۔ان کی درخواست ہے کہ حکومت جنوبی پنجاب کے چھوٹے شہروں

میں بھی کھیلوں کے فروغ فنڈز فراہم کرے۔خصوصاً خواتین کے لیے پاور لفٹنگ اور ویٹ لفٹنگ کے کلب بھی بنائے جہاں مزید کھلاڑی تیار ہوکر عالمی مقابلوں میں پاکستان کی نمائندگی کر سکیں۔شازیہ کنول بٹ کی تربیت انکے بھائی سہیل بٹ کرتے ہیں جوچالیس برس سے سپورٹس سے وابستہ ہیں انٹر نیشنل پاور لفٹنگ میں کانسی کاتمغہ جیت چکے ہیں اور پاکستان کے کپتان بھی رہ چکے ہیں۔

About AWAAZ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)