Breaking News
مانچیسٹر حملہ: قبل از وقت معلومات افشا کرنے پر برطانیہ امریکہ سے ناراض

مانچیسٹر حملہ: قبل از وقت معلومات افشا کرنے پر برطانیہ امریکہ سے ناراض

برطانیہ کی وزیرِ داخلہ امبر رڈ نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے مانچیسٹر میں خودکش حملہ کرنے والے شدت پسند سلمان عبیدی کے بارے میں برطانیہ سے پہلے معلومات ظاہر کرنے پر انھیں غصہ آیا ہے۔

امبر رڈ نے کہا کہ برطانیہ تجسس کے عنصر کو برقرار رکھنے کے لیے معلومات کی ترسیل کو اپنے کنٹرول میں رکھنا چاہتا تھا۔

مانچیسٹر حملہ: سلمان عبیدی کون تھا؟

مانچیسٹر خود کش حملہ: مزید تین افراد گرفتار

خطرے کی سطح کب کب بڑھی اور کیوں؟

بی بی سی ریڈیو فور سے بات کرتے ہوئے وزیرِ داخلہ نے کہا کہ انہوں نے امریکہ سے کہہ دیا ہے کہ ایسا دوبارہ نہیں ہونا چاہیے۔

امبر رڈ کہہ چکی ہیں کہ مانچیسٹر میں پیدا ہونے والا سلمان عبیدی برطانوی سکیورٹی ادروں کی نظروں میں تھا۔ برطانوی حکام کے مطابق مشتبہ خود کش حملہ آور کے والدین کا تعلق لیبیا سے ہے۔

انسداد دہشتگردی کے اہلکار اِس بات کی نشاندہی کر چکے ہیں کہ مشتبہ لوگوں کے نام وقت سے پہلے میڈیا میں نہ آنا کبھی کبھی ان کے لیے کتنا اہم ہوتا ہے۔

ان کے مطابق زیرِ تفتیش شخص کا نام 36 گھنٹے تک میڈیا میں نہ آنے سے تحقیقات میں مدد ملتی ہے اور اس سے پہلے کہ

مشتبہ شخص کے ساتھیوں کو یہ احساس ہو کہ پولیس انھیں ڈھونڈ رہی ہے انھیں گرفتار کیا جا سکتا ہے۔

مانچیسٹر کے حملہ آور کے بارے میں معلومات سب سے پہلے امریکہ میں سامنے آئیں اور امبر رڈ نے کہا کہ وہ اس بات کی تحقیق کریں گی کہ اداروں کے درمیان معلومات کے تبادلے کی وجہ سے کس طرح وقت سے پہلے یہ معلومات منظر عام پر آ گئیں جبکہ برطانوی پولیس اور سکیورٹی ادارے نہیں چاہتے تھے کہ یہ عوام کے سامنے آئیں۔

انھوں نے کہا کہ برطانوی پولیس کا موقف بالکل واضح رہا ہے کہ وہ اپنے تحقیقاتی عمل کے تحفظ کے لیے معلومات کی ترسیل اپنی مرضی سے کرنا چاہتی ہے۔

‘لہٰذا اگر معلومات دوسرے ذرائع سے باہر آ جائیں تو یہ غصے والی بات ہے۔ اسی لیے میں نے اپنے دوستوں سے کہہ دیا ہے کہ ایسا دوبارہ نہیں ہونا چاہیے۔’

بی بی سی کے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایڈیٹر نورمن سمتھ کا کہنا ہے کہ مس رڈ کے غصے کا سبب یہ حقیقت ہے کہ مانچیسٹر میں خودکش حملے کی تحقیقات کے بارے میں اہم معلومات امریکہ میں میڈیا کو افشا کر دی گئی تھیں۔

About Faiza Abbas

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)